پايگاه اطلاع رساني دفتر آيت الله العظمي شاهرودي دام ظله
ArticleID PicAddress Subject Date
{ArticleID}
{Header}
{Subject}

{Comment}

 {StringDate}
Wednesday 12 December 2018 - الأربعاء 03 ربيع الثاني 1440 - چهارشنبه 21 9 1397
 
 
 
 
  • احکام محتضر  
  • Sendtofriend
  •  
  •  
  • مسئلہ١١٩:وہ مسلمان جو حالت احتضارمیں ہو یعنی دم توڑ رہا ہو وہ مرد ہو یا عورت، بڑا ہو یا چھوٹا اسے اس طرح چت لٹا دینا چاہیۓ کہ اس کے تلوے قبلہ کی طرف ہوں اور اگر اسے پوری طرح اس طریقے سے نہ لٹایا جاسکے تو جہاں تک ممکن ہواس دستور پر عمل کیا جاۓ، اور اگر اسے کسی صورت میں بھی نہ لٹایاجاسکے تو اولیٰ و بہتر یہ ہے کہ اسے رو بہ قبلہ بٹھا دیں، اور اگر یہ بھی ممکن نہ ہو تو اسے دائیں کروٹ،اور اگر یہ بھی ممکن نہ ہو تو پھر اسے بائیں کروٹ قبلہ رخ لٹا دیں بشرطیکہ محتضر کو اذیّت نہ ہو۔

    مسئلہ١٢٠:احتیاط واجب یہ ہے کہ جب تک غسل میّت تمام نہ ہو جاۓ اسے رو بہ قبلہ لٹاۓ رہیں لیکن غسل ختم ہونے کے بعد بہتر ہے کہ اسے اس طرح لٹا دیں جیسے نماز میّت پڑھتے وقت لٹاتے ہیں۔

    مسئلہ١٢١:مستحب ہے کہ وہ شخص جو سخت جانکنی کے عالم میں ہو اور اسے تکلیف نہ ہو تو اسے اس جگہ پر لے جائیں جہاں وہ نماز پڑھا کرتا تھا۔

    مسئلہ١٢٢:مستحب ہے کہ محتضر کو آرام پہنچانے کے لۓ اس کے سرہانے سورۂ مبارکہ ’’یٰس‘‘ ’’والصّافات‘‘ ’’احزاب‘‘ ’’آیت الکرسی‘‘،سورۂ’’اعراف‘‘کی چوّنویں آیت اور سورۂ’’بقرہ‘‘کی آخری تین آیتوں کی تلاوت کی جاۓ بلکہ جتنا بھی ممکن ہو قرآن پڑھا جاۓ۔

    مسئلہ١٢٣:محتضر کو اکیلا چھوڑنا، اسکے پیٹ پر کوئ چیز رکھنا، اس کے قریب مجنب یا حائض کا رہنا، رونا ، عورتوں کو محتضر کے نزدیک تنہا چھوڑنا مکروہ ہے اور بعض کتابوں میں محتضر کے نزدیک زیادہ باتیں کرنے کو بھی مکروہ جانا گیا ہے۔

    

     
     
  • RelatedArticle
  •  
     
     
     
     

    The Al-ul-Mortaza Religious Communication Center, Opposite of Holy Shrine, Qom, IRAN
    Phone: 0098 251 7730490 - 7744327 , Fax: 0098 251 7741170
    Contact Us : info @ shahroudi.net
    Copyright : 2000 - 2011